Ticker

6/recent/ticker-posts

Sad Love Poetry in Urdu

Poetry in Urdu 2 Lines

John Elia Poetry in Urdu


ٹھیک ہے خود کو ہم بدلتے ہیں

ٹھیک ہے خود کو ہم بدلتے ہیں 
شکریہ مشورت کا چلتے ہیں 

ہو رہا ہوں میں کس طرح برباد 
دیکھنے والے ہاتھ ملتے ہیں 

ہے وہ جان اب ہر ایک محفل کی 
ہم بھی اب گھر سے کم نکلتے ہیں 

کیا تکلف کریں یہ کہنے میں 
جو بھی خوش ہے ہم اس سے جلتے ہیں 

ہے اسے دور کا سفر در پیش 
ہم سنبھالے نہیں سنبھلتے ہیں 

تم بنو رنگ تم بنو خوشبو 
ہم تو اپنے سخن میں ڈھلتے ہیں 

میں اسی طرح تو بہلتا ہوں 
اور سب جس طرح بہلتے ہیں 

ہے عجب فیصلے کا صحرا بھی 
چل نہ پڑیے تو پاؤں جلتے ہیں 

 تم بانو رنگ، تم بانو خوشبو
ہم تو اپنے سکھن میں دھلتے ہیں۔

ہم کوئی بد معاملہ تو نہیں
زخم کھاتے ہیں، ظاہر اگلتے ہیں۔

شام فرقت کی لیلہ اٹھی۔
وو ہوا ہے کے زخم پھلتے ہیں۔


Theek Hai Khud Ko Hum Badalte Hain


theek hai khud ko hum bdalty hain
shukriya mashwarat ka chaltay hain

ho raha hon mein kis terhan barbaad
dekhnay walay haath mlitay hain

hai woh jaan ab har aik mehfil ki
hum bhi ab ghar se kam nikaltay hain

kya takalouf karen yeh kehnay mein
jo bhi khush hai hum is se jaltay hain

hai usay daur ka safar dar paish
hum sambhale nahi sambhalte hain

tum bano rang tum bano khushbu
hum to –apne sukhan mein dhalte hain

mein isi terhan to behalta hon
aur sab jis terhan behaltay hain

hai ajab faislay ka sehraa bhi
chal nah padiye to paon jaltay hain

Tum Bano Rang, Tum Bano Khushboo
Hum To Apne Sukhan Mein Dhalte Hain

Hum Koi Bad-Mua’amla To Nahin
Zakhm Khaate Hain, Zaher Ugalte Hain

Shaam Furqat Ki Lehlaha Uthi
Wo Hawa Hai Ke Zakhm Phalte Hain



For More John Elia Poetry :