Ticker

6/recent/ticker-posts

Urdu Poetry on Beauty

Poetry in Urdu 2 Lines

John Elia Poetry in Urdu


میں شاید تم کو یکسر بھولنے والا ہوں


میں شاید تم کو یکسر بھولنے والا ہوں
 شاید جان جاں شاید

 کہ اب تم مجھ کو پہلے سے زیادہ یاد آتی ہو
 ہے دل غمگیں بہت غمگیں

 کہ اب تم یاد دل دارانہ آتی ہو
 شمیم دور ماندہ ہو

 بہت رنجیدہ ہو مجھ سے
 مگر پھر بھی

 مشام جاں میں میرے آشتی مندانہ آتی ہو
 جدائی میں بلا کا التفات محرمانہ ہے

 قیامت کی خبر گیری ہے
 بے حد ناز برداری کا عالم ہے

 تمہارے رنگ مجھ میں اور گہرے ہوتے جاتے ہیں
 میں ڈرتا ہوں

 مرے احساس کے اس خواب کا انجام کیا ہوگا
 یہ میرے اندرون ذات کے تاراج گر

 جذبوں کے بیری وقت کی سازش نہ ہو کوئی
 تمہارے اس طرح ہر لمحہ یاد آنے سے

 دل سہما ہوا سا ہے
 تو پھر تم کم ہی یاد آؤ

 متاع دل متاع جاں تو پھر تم کم ہی یاد آؤ
 بہت کچھ بہہ گیا ہے سیل ماہ و سال میں اب تک

 سبھی کچھ تو نہ بہہ جائے
 کہ میرے پاس رہ بھی کیا گیا

 ہے کچھ تو رہ جائے


Mein Shayad Tum Ko Yuksar Bhoolnay Wala Ho

mein shayad tum ko yaksar bhoolnay wala hon
shayad jaan jaan shayad

ke ab tum mujh ko pehlay se ziyada yaad aati ho
hai dil 
ghamgeen bohat ghamgeen

ke ab tum yaad dil daarana aati ho
shamem daur mandah ho

bohat ranjida ho mujh se
magar phir bhi

Masham jaan mein mere aashtee mandana aati ho
judai mein bulaa ka iltifaat mehermana hai

qayamat ki khabar Gary hai
be had naz bardari ka aalam hai

tumahray rang mujh mein aur gehray hotay jatay hain
mein darta hon

marey ehsas ke is khawab ka injaam kya hoga
yeh mere androon zaat ke taaraaj gir

jazbun ke berry waqt ki saazish nah ho koi
tumahray is terhan har lamha yaad anay se

dil sehma sun-hwa sa hai
to phir tum kam hi yaad aao

Mataa dil Mataa jaan to phir tum kam hi yaad aao
bohat kuch beh gaya hai sale mah o saal mein ab tak

sabhi kuch to nah beh jaye
ke mere paas reh bhi kya gaya hai

kuch to reh jaye..



For More John Elia Poetry :