Ticker

6/recent/ticker-posts

Yaad Poetry in Urdu

These lines capture the essence of Jaun Elia's distinguished poetic style, marked by his ability to explore life's complex challenges while conveying emotional depth through verse. His work has left an indelible mark on Urdu poetry enthusiasts worldwide and continues to be celebrated for its depth and modern aesthetics.

Poetry in Urdu 2 Lines

John Elia Poetry in Urdu


تو بھی چپ ہے میں بھی چپ ہوں یہ کیسی تنہائی ہے 


تو بھی چپ ہے میں بھی چپ ہوں یہ کیسی تنہائی ہے 
تیرے ساتھ تری یاد آئی کیا تو سچ مچ آئی ہے 

شاید وہ دن پہلا دن تھا پلکیں بوجھل ہونے کا 
مجھ کو دیکھتے ہی جب اس کی انگڑائی شرمائی ہے 

اس دن پہلی بار ہوا تھا مجھ کو رفاقت کا احساس 
جب اس کے ملبوس کی خوشبو گھر پہنچانے آئی ہے 

حسن سے عرض شوق نہ کرنا حسن کو زک پہنچانا ہے 
ہم نے عرض شوق نہ کر کے حسن کو زک پہنچائی ہے 

ہم کو اور تو کچھ نہیں سوجھا البتہ اس کے دل میں 
سوز رقابت پیدا کر کے اس کی نیند اڑائی ہے 

ہم دونوں مل کر بھی دلوں کی تنہائی میں بھٹکیں گے 
پاگل کچھ تو سوچ یہ تو نے کیسی شکل بنائی ہے 

عشق پیچاں کی صندل پر جانے کس دن بیل چڑھے 
کیاری میں پانی ٹھہرا ہے دیواروں پر کائی ہے 

حسن کے جانے کتنے چہرے حسن کے جانے کتنے نام 
عشق کا پیشہ حسن پرستی عشق بڑا ہرجائی ہے 

آج بہت دن بعد میں اپنے کمرے تک آ نکلا تھا 
جوں ہی دروازہ کھولا ہے اس کی خوشبو آئی ہے 

ایک تو اتنا حبس ہے پھر میں سانسیں روکے بیٹھا ہوں 
ویرانی نے جھاڑو دے کے گھر میں دھول اڑائی ہے 


Tu bhi chup hai main bhi chup hun ye kaisi tanhai hai


tu bhi chup hai main bhi chup hun ye kaisi tanhai hai
tere sath teri yaad aai kya tu sach-much aai hai

shayad wo din pahla din tha palken bojhal hone ka
mujh ko dekhte hi jab us ki angdai sharmai hai

us din pahli bar hua tha mujh ko rifaqat ka ehsas
jab us ke malbus ki KHushbu ghar pahunchane aai hai

husn se arz-e-shauq na karna husn ko zak pahunchana hai
hum ne arz-e-shauq na kar ke husn ko zak pahunchai hai

hum ko aur to kuchh nahin sujha albatta us ke dil mein
soz-e-raqabat paida kar ke us ki nind udai hai

hum donon mil kar bhi dilon ki tanhai mein bhaTkenge
pagal kuchh to soch ye tu ne kaisi shakl banai hai

ishq-e-pechan ki sandal par jaane kis din bel chadhe
kyari mein pani Thahra hai diwaron par kai hai

husn ke jaane kitne chehre husn ke jaane kitne nam
ishq ka pesha husn-parasti ishq bada harjai hai

aaj bahut din baad main apne kamre tak aa nikla tha
jun hi darwaza khola hai us ki khushbu aai hai

ek to itna habs hai phir main sansen roke baiTha hun
virani ne jhadu de ke ghar mein dhul udai hai


For More John Elia Poetry :