Ticker

6/recent/ticker-posts

Deep Poetry in Urdu

Poetry in Urdu 2 Lines

John Elia Poetry in Urdu


جو گزر دشمن ہے اس کا رہ گزر رکھا ہے نام

جو گزر دشمن ہے اس کا رہ گزر رکھا ہے نام
 ذات سے اپنی نہ ہلنے کا سفر رکھا ہے نام

 پڑ گیا ہے اک بھنور اس کو سمجھ بیٹھے ہیں گھر
 لہر اٹھی ہے لہر کا دیوار و در رکھا ہے نام

 نام جس کا بھی نکل جائے اسی پر ہے مدار
 اس کا ہونا یا نہ ہونا کیا، مگر رکھا ہے نام

 ہم یہاں خود آئے ہیں لایا نہیں کوئی ہمیں
 اور خدا کا ہم نے اپنے نام پر رکھا ہے نام

 چاک چاکی دیکھ کر پیراہن پہنائی کی 
 میں نے اپنے ہر نفس کا بخیہ گر رکھا ہے نام

 میرا سینہ کوئی چھلنی بھی اگر کر دے تو کیا
 میں نے تو اب اپنے سینے کا سپر رکھا ہے نام

 دن ہوئے پر تو کہیں ہونا کسی بھی شکل میں
 جاگ کر خوابوں نے تیرا رات بھر رکھا ہے نام


Jo Guzar Dushman Hai is Ka Reh Guzar Rakha Hai Naam


jo guzar dushman hai is ka reh guzar rakha hai naam
zaat se apni nah hilnay ka safar rakha hai naam

par gaya hai ik bhanwar is ko samajh baithy hain ghar
lehar uthi hai lehar ka deewar o dar rakha hai naam

naam jis ka bhi nikal jaye isi par hai madaar
is ka hona ya nah hona kya, magar rakha hai naam

hum yahan khud aaye hain laya nahi koi hamein
aur kkhuda ka hum ne –apne naam par rakha hai naam

chaak chaki dekh kar pairahan pahnai ki
mein ne –apne har nafs ka bakhia gir rakha hai naam

mera seenah koi chhalni bhi agar kar day to kya
mein ne to ab –apne seenay ka super rakha hai naam

din hue par to kahin hona kisi bhi shakal mein
jaag kar khowaboon ne tera raat bhar rakha hai naam


For More John Elia Poetry :