Ticker

6/recent/ticker-posts

sad poetry in urdu

Poetry in Urdu 2 Lines

John Elia Poetry in Urdu


نہیں شوریدگانِ شہر میں وہ سوزِ جاں اب کے

نہیں شوریدگانِ شہر میں وہ سوزِ جاں اب کے
​ ہیں شامیں سوختہ جانوں کی بے شورِ فغاں اب کے
​ ہیں شوقِ گرمئ آغوش کے جذبے زمستانی
شب اندر شب ہو جیسے برفباری کا سماں اب ک​
 کوئی لہجہ یہاں شعلے پہن کے اب نہیں آتا

 ​نہیں سایہ فگن محفل پہ سانسوں  دھواں اب کے​
 سرود و ساز ہیں سرما فروشِ حلقۂ یاراں​
 دلوں میں زمہریری کپکپی ہے پر فشاں اب کے​
 ستم ہے رشتہ ہائے آشتی کی پاسداری ہے
 ​
 مرے یارو! تمہارے اور خدا کے درمیاں اب کے
​ لباسِ آتشِ انکارِ ابلیسی جلا ڈالا
​ یقیں کے ستر پوشانِ گماں نے بے گماں اب کے
​ ہوئی گم اے گروہِ دل تپاں، آتش بجاں آخر
​ ترے احساس اور انفاس کی سوزش کہاں اب کے

 ​ہے اک خورشیدِ یخ بستہ کا پرتو خاک پر غلطاں​
 ہے زندہ دھوپ کو ترسی ہوئی یہ بستیاں اب کے
​ سیاہی کی لپک ہے اور ہیں آتشکدے اپنے
​ کہاں پائیں فروغِ چشمِ جاں زردشتیاں اب کے

​ ​ در و دیوار یخ ہیں اور ہوائیں زمہریری ہیں​
 لبِ شکوہ کھلے بھی تو صدائیں زمہریری ہیں​
 دلوں کی فصل برفانی ہے اور شیوے زمستانی
​ وفائیں زمہریری ہیں، جفائیں زمہریری ہیں​
 کسے کس سے گلہ ہو اور گلے کا کیا صلہ ٹھہرے​
 سماعت یخ زدہ ہے، التجائیں زمہریری ہیں
​ ​
 کیا خونِ جگر کا خوش گمانی میں زیاں ہم نے
​ شفق کے رنگ لکھے داستاں در داستاں ہم نے
​ فضا ہے ایسی برفانی کہ سانسیں جم کے رہ جائیں​
 نہ کی ہوتی یہاں سینے کی گرمی رائیگاں ہم نے

​ ​ نفس ٹھٹھرے ہوئے ہیں شعلہ ہائے لب کے موسم میں​
 مجھے سردی زیادہ ہی لگے گی اب کے موسم


nahi شوریدگان shehar mein woh soze jaan ab ke
​hain shamen sokhta jaanun ki be shore fghan ab ke
hain shoqِ garmi agosh ke jazbay zamastani
shab andar shab ho jaisay brfbari ka samaa ab ke ?
koi lehja yahan sholay pehan ke ab nahi aata

​Nahi saya figan mehfil pay saanson dhuwan ab ke ?
Surood o saaz hain sarma farosh halqa یاراں​
dilon mein zamrazei kapkapi hai par fishan ab ke ?
sitam hai rishta haae aashtee ki pasdari hai
?
marey yaaro! tumahray aur kkhuda ke darmia ab ke
labas aatish Inkaar eblesi jala dala
​یقیں ke sattar پوشان guma ne be guma ab ke
​ہوئی gum ae giroh dil Tapan , aatish bajan aakhir
​ترے ehsas aur anfaas ki soozish kahan ab ke

ha ik khurshid yakh basta ka Partu khaak par غلطاں​
hai zindah dhoop ko tarsi hui yeh bastiyan ab ke
​سیاہی ki lapak hai aur hain آتشکدے –apne
​کہاں payen froghِ chashm-e jaan زردشتیاں ab ke

dar o deewar yakh hain aur hawae zamrazei hain​
lbِ shikwah khulay bhi to sadayen zamrazei hain​​
dilon ki fasal barfani hai aur shavey zamastani
​wafaien zamrazei​ hain, jafayeen zamrazei hain​​
kisay kis se gilah ho aur gilaay ka kya sila thehray ?
samaat yakh zada hai, iltijaayen zamrazei hain
​​
kya khon-e jigar ka khush gumani mein zayan hum ne
​شفق ke rang likhay dastan dar dastan hum ne
Fazaa hai aisi barfani ke sansen jim ke reh jayain​
nah ki hoti yahan seenay ki garmi raaygan hum ne

​​Nafas tartahray hue hain shola haae lab ke mausam main​
mujhe sardi ziyada hi lagey gi ab ke mausam mein



For More John Elia Poetry :

Urdu Poetry John Elia