Ticker

6/recent/ticker-posts

Deep Poetry in Urdu Text

Poetry in Urdu 2 Lines

John Elia Poetry in Urdu


نہ ہوا نصیب قرار جاں ہوس قرار بھی اب نہیں

نہ ہوا نصیب قرار جاں ہوس قرار بھی اب نہیں
 ترا انتظار بہت کیا ترا انتظار بھی اب نہیں

 تجھے کیا خبر مہ و سال نے ہمیں کیسے زخم دیے یہاں
 تری یادگار تھی اک خلش تری یادگار بھی اب نہیں

 نہ گلے رہے نہ گماں رہے نہ گزارشیں ہیں نہ گفتگو
 وہ نشاط وعدۂ وصل کیا ہمیں اعتبار بھی اب نہیں

 رہے نام رشتۂ رفتگاں نہ شکایتیں ہیں نہ شوخیاں
 کوئی عذر خواہ تو اب کہاں کوئی عذر دار بھی اب نہیں

 کسے نذر دیں دل و جاں بہم کہ نہیں وہ کاکل خم بہ خم
 کسے ہر نفس کا حساب دیں کہ شمیم یار بھی اب نہیں

 وہ ہجوم دل زدگاں کہ تھا تجھے مژدہ ہو کہ بکھر گیا
 ترے آستانے کی خیر ہو سر رہ غبار بھی اب نہیں

 وہ جو اپنی جاں سے گزر گئے انہیں کیا خبر ہے کہ شہر میں
 کسی جاں نثار کا ذکر کیا کوئی سوگوار بھی اب نہیں

 نہیں اب تو اہل جنوں میں بھی وہ جو شوق شہر میں عام تھا
 وہ جو رنگ تھا کبھی کو بہ کو سر کوئے یار بھی اب نہیں


Nah Sun-Hwa Naseeb Qarar Jaan Hawas Qarar Bhi Ab Nahi

nah sun-hwa naseeb qarar jaan hawas qarar bhi ab nahi
tra intzaar bohat kya tra intzaar bhi ab nahi

tujhe kya khabar Meh o saal ne hamein kaisay zakham diye yahan
tri yadgar thi ik khalish tri yadgar bhi ab nahi

nah gilaay rahay nah guma rahay nah Guzarshain hain nah guftagu
woh nishat wada wasal kya hamein aitbaar bhi ab nahi

rahay naam rishta raftagan nah shikaytein hain nah shokhiyan
koi izr khuwa to ab kahan koi izr daar bhi ab nahi

kisay Nazar den dil o jaan baham ke nahi woh kakul khham bah khham
kisay har nafs ka hisaab den ke shamem yaar bhi ab nahi

woh hajhoom dil zdgan ke tha tujhe Musda ho ke bikhar gaya
tre astane ki kher ho sir reh gubhar bhi ab nahi

woh jo apni jaan se guzar gaye inhen kya khabar hai ke shehar mein
kisi jaan Nisar ka zikar kya koi sogwaar bhi ab nahi

nahi ab to ahal junoo mein bhi woh jo shoq shehar mein aam tha
woh jo rang tha kabhi ko bah ko sir koye yaar bhi ab nahi



For More John Elia Poetry :